99

پنجاب میں بغیر ہیلمٹ موٹرسائیکل چلانے پر چالان

پنجاب میں بغیر ہیلمٹ موٹرسائیکل چلانے پر چالان فیس 200 روپے سے 600روپے ہوگی، کار سواروں کیلئے سیٹ بیلٹ، موبائل کے استعمال پر جرمانہ 750، ڈرائیونگ لائسنس نہ ہونے پر 750 روپے جرمانہ کرنے کی منظوری دی گئی، کم عمر موٹر سائیکل سواروں کو 500 روپے جرمانہ ہوگا۔ نجی ٹی وی کے مطابق پنجاب حکومت نے موٹر سائیکل بغیر ہیلمٹ کے چلانے پر چالان 200 روپے کی بجائے 600 روپے ہوگا۔موٹر سائیکل سوار کیلئے قانون شکنی پر چالان میں 300 سے 400 روپے تک اضافہ ہوگا۔ اوورسپیڈ، نو پارکنگ، رونگ وے اور رات کو بغیر لائٹس کے موٹرسائیکل چلانے پر جرمانہ 200 سے 400 روپے کرنے کی منظوری، رکشہ چلانے والوں کے جرمانوں میں 250 سے 500 روپے تک اضافہ کردیا گیا، کم عمر میں موٹر سائیکل چلانے والوں پر بھی چالان 500 روپے کرنے کی منظوری دے دی گئی ہےڈرائیونگ لائسنس نہ ہونے پر موٹر سائیکل سوار اور رکشہ پر 600 اور گاڑی والے پر 750 روپے جرمانہ کرنے کی منظوری دے دی گئی۔ مسافر گاڑیوں پر ٹریفک چالان 1000 روپے سے 2000 روپے تک مقرر کرنے کی منظوری دے دی گئی۔ کارسواروں پر چالان سیٹ بیلٹ، موبائل کے استعمال پر جرمانہ 500 سے 750 تک کرنے کی منظوری دے دی گئی۔ ریش ڈرائیونگ، پریشر ہارن، رونگ وے گاڑی چلانے پر جرمانہ 1000 روپے کرنے کی منظوری، جعلی نمبر پلیٹ والی موٹرسائیکل پر1000 اور گاڑی پر2000 روپے تک جرمانہ بڑھانے کی منظوری دی گئیدوسری جانب معاون خصوصی اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ 5 سال پرانی گاڑیوں کیلئے روڈ فٹنس سرٹیفکیٹ لازم ہوگا۔ موٹرسائیکل اور رکشوں کیلئے فی الحال جرمانے نہیں بڑھائے گئے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں